بین الاقوامی

بھارت میں آر ایس ایس کے غنڈے سرِعام مسلمانوں پر تشدد کرنے لگے

بھارت میں اقلیتیں کہاں جائیں؟ ریاست بِہار میں آر ایس ایس کے غنڈوں کا مسلمانوں پہ حملہ۔ مسجد میں توڑ پھوڑ، املاک کو آگ لگا دی۔ مسلم آبادی پہ حملے کے بعد علاقے میں کشیدگی۔

 

بھارت کا جمہوری چہرہ بےنقاب ہوگیا۔ آر ایس ایس کے دہشت گرد ملک بھر میں کھل کر مسلمانوں پر حملے کرنے لگے۔ مساجد اور نجی املاک بھی مودی کے دہشت گردوں سے محفوظ نہ رہیں۔ بِہار میں آر ایس ایس کے غنڈوں نے حکومت کی سرپرستی میں مسلمانوں پر حملہ کر دیا۔

آر ایس ایس کے دہشت گرد ٹرالیاں بھر کر بازار میں لوگ لائے جنہوں نے مسلمانوں کو مارنا اور دنگا فساد کرنا شروع کر دیا۔

انہوں نے مسلمانوں کی سینکڑوں املاک اور دکانیں جلا دیں اور مساجد پر پتھراؤ بھی کیا۔ پولیس اس سب کارروائی کے دوران غنڈوں کو روکنے میں بے بس رہی۔ دہشتگرد کھلےعام خوف و حراس پھیلاتے رہے۔

مسلمانوں کی جانب سے ٹویٹر پر وزیراعلٰی دنیش کمار اور وزیراعظم نریندر مودی سے رحم کی اپیلیں کی گئیں مگر وہ کوئی مؤثر جواب حاصل کرنے سے قاصر رہے۔ اس اقدام نے جمہوریت کا راگ الاپنے والے بھارت کے منہ پر کالک مل دی ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ بھارت میں اس طرح کے واقعات عام ہوتے جا رہے ہیں۔ وہاں نہ مسلمان محفوظ ہیں اور نہ ہی سکھ۔ بھارت میں نچلی ذات والے لوگوں کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ دلت، ویش، شودر بھی اب انتہا پسند غنڈوں کی جانب سے ظلم و ستم کا نشانہ بن رہے ہیں۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers