قومی

قوم کے نمائندے قوم کو کتنے میں پڑتے ہیں؟

عوامی نمائندے عوام کو مہنگے پڑنے لگے۔ ایوان میں آئیں نہ آئیں ایک رکن کی ماہانہ دو لاکھ تنخواہ پکی۔ ارکان کی قانون سازی پر کم اور اپنی مراعات پر توجہ زیادہ۔ ایک سال میں صرف 7 قوانین پاس ہوئے۔

سینیٹ کا ایک روز کا خرچ 88 لا کھ ، قومی اسمبلی کا ایک کروڑ 26 لاکھ ہے

سینیٹ کا ایک روز کا خرچ 88 لا کھ ، قومی اسمبلی کا ایک کروڑ 26 لاکھ ہے#BreakingNews #NewsReport #AapNews

Posted by Aap News on Friday, October 11, 2019

 

قومی اسمبلی اور سینیٹ کا ایک روز کا خرچہ 2 کروڑ سے زائد ہے۔ ارکان پارلیمنٹ تنخواہوں اور مراعات کی صورت میں ماہانہ لاکھوں روپے وصول کرتے ہیں۔ مگر ان دونوں معزز ایوانوں میں قانون سازی نہ ہونے کے برابر ہے۔

دونوں ایوانوں کا بجٹ 7 ارب 82 کروڑ سے زائد ہے۔ سینیٹ کے ایک اجلاس پر 88 لاکھ جبکہ قومی اسمبلی کے ایک اجلاس پہ ایک کروڑ 26 لاکھ روپے ہے۔

ایک رکن قومی اسمبلی کی بنیادی تنخواہ 1.5 لاکھ روپے ہے مگر الاؤنسز ملا کر تنخواہ 2 لاکھ 13 ہزار روپے تک بنتی ہے۔ اور اگر جہاز میں سفر کرنا ہو تو سالانہ اے کلاس کے 25 ٹکٹس یا 3 لاکھ کے واؤچرز ملتے ہیں۔ اس کے علاوہ کوئٹہ اور کراچی سے آنے والے اراکین کو 4800 روپیہ ڈیلی الاؤنس کی مد میں دیا جاتا ہے۔

اگر کوئی معزز ممبر چئیرمین قائمہ کمیٹی بنتا ہے تو اس کو 25 ہزار روپے اضافی دیے جاتے ہیں۔ اس کے عالوہ سرکاری گاڑی سٹاف اور دفتر بھی فراہم کیا جاتا ہے۔

دوسری جانب اگر قانون سازی کی بات کی جائے تو ایک سال میں ابھی تک صرف 7 ایکٹ پاس کیے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ 50 سے زائد قانون سازی کے بلز زیر التوا ہیں۔

پارلیمانی سیکرٹریز کو روزانہ 1600 روپیہ ادا کیا جاتا ہے۔ جن کی تعداد 20 سے زیادہ ہے۔ سیکرٹریز کا میڈیکل کی سہولیات ایک وفاقی سیکرٹری کے برابر کی دی جاتی ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ اراکین نے یہ بل بھی پاس کرایا ہے کہ سرکاری ملازمین کی طرح ہر سال 10 فیصد ان کی تنخواہوں اور مراعات میں بھی اضافہ ہوگا۔

Comment here

instagram default popup image round
Follow Me
502k 100k 3 month ago
Share