قومی

ملک کے دو بڑے خساروں پر قابو پا لیا ہے: حفیظ شیخ

معیشیت کے میدان سے اچھی خبریں۔ مشیر خزانہ حفیظ شیخ کہتے ہیں کہ ملک کے دو بڑے خساروں پر قابو پا لیا ہے۔ مالیاتی خسارے میں 36 فیصد کمی، تجارتی کسارہ 32 فیصد کم ہوا۔ پہلی سہ ماہی میں ریوینیو 16 فیصد بڑھا۔ 5 لاکھ افراد ٹیکس نیٹ میں آئے۔ بیرونی سرمایہ کاری میں 340 ملین ڈالر اضافہ ہوا۔

اسلام آباد میں مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے دو بڑے خساروں پر قابو پالیا ہے۔ حکومت کے اخراجات اور آمدنی میں گیپ کو 36 فیصد کم کیا گیا ہے۔

بولے کہ پہلی سہ ماہی میں ریوینیو 16 فیصد بڑھا ہے۔ اس کے علاوہ پاکستان کی معشیت سے متعلق بیرونی سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہوا ہے اور گزشتہ تین ماہ کے دورانیے میں 340 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری ہوئی ہے۔

رواں مالی سال میں تجارتی خسارہ 9 ارب ڈالر سے کم ہو کر 5 اعشاریہ 7 ارب ڈالر تک ہو گیا ہے۔ 5لاکھ نئے ٹیکس دہندگان کو ٹیکس نیٹ میں شامل کیا۔ گزشتہ 3 ماہ میں اسٹیٹ بینک سے کوئی قرضہ نہیں لیا گیا۔ رواں مالی سال کے پہلے تین ماہ میں اسٹیٹ بینک کا منافع 85 ارب روپے ہے جس میں 200 ارب روپے تک کا اضافہ ہو سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں روپے کی قدر کو مستحکم رکھنے کے لیے کئی ارب ڈالر ضائع کیے گئے، گزشتہ 3 ماہ سے ایکسچینج ریٹ مستحکم ہے۔ پیٹرول کی قیمت اس لیے نہیں بڑھی کیونکہ کرنسی میں استحکام آیا ہے۔ گزشتہ 5 سال میں برآمدات میں کوئی اضافہ نہیں ہوا۔

جنوری تا اگست 3 لاکھ 73 ہزار افراد ملازمتوں کیلئے بیرون ملک گئے۔ یرون ملک ملازمتوں کیلئے جانے والوں میں ڈیڑھ لاکھ افراد کا اضافہ ہوا۔ تاجروں سے 20 دفعہ سے زائد مذاکرات ہو چکے ہیں اور ان کے ساتھ مذاکرات اب بھی جاری ہیں۔

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے حوالے سے بات کرتے ہوئے حفیظ شیخ نےکہا کہ 27 میں سے 20 اقدامات کیے جا چکے ہیں اور کوشش ہے کہ ہم جلد از جلد گرے لسٹ سے نکل آئیں۔

منی لانڈرنگ کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ منی لا نڈرنگ روکنے کے لیے تمام اداروں کا مؤقف ایک ہے کہ منی لا نڈرنگ رکنی چاہیے۔

حکومتی اخراجات کے حوالے سے کہا کہ حکومت نے اپنے اخراجات کم کیے ہیں۔ وزیراعظم اور وزیراعظم ہاؤس کے اخراجات میں بھی کمی آئی ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers