قومی

مذاکرات کے جب دروازے بند ہوتے ہیں تو حادثات ہوتے ہیں: شیخ رشید

وزیر ریلوے شیخ رشید کا مولانا کو مذاکرات کا مشورہ۔ کہا کہ سیاستدان کبھی بات چیت سے انکار نہیں کرتا۔

 

رائیونڈ ریلوے اسٹیشن کے افتتاح کے موقع پر وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ مزدور ہی مزدور کا دشمن ہے۔ پہلی دفع ایک نوکری بھی ریلوے میں پیسوں میں نہیں بکی۔ ایک سال میں ریلوے نے ایم ایل ون کا سیکشن پی سی ون مکمل کر لیا ہے۔ سارے ریلوے کراسنگ اور انڈر وے ختم ہو جائیں گے۔

کہا کہ میں نے کہا تھا کہ پانچ سال میں ٹارگٹ حاصل کروں گا ہم نے آج اور کل فریٹ میں اپنا ٹارگٹ حاصل کر لیا ہے۔ ہم سات آٹھ سے 16 ٹرینوں پر پہنچ گئے ہیں۔ ہم نے 38 نئی ٹرینیں چلائی ہیں۔ انشاءاللہ اگر کوچز آ گئے تو 150 تک کروں گا۔

بولے کہ لوگوں کے دلوں میں غبار اٹھ رہا ہے کہ ریلوے کیوں چل رہی ہے حادثات کیوں ہو رہے ہیں، ہم نے 138 ٹرینیں چالئی ہیں۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ دنیا میں پاکستان وہ واحد ملک ہے جس میں پیسینجر ٹرین بھی نفعے میں چل رہی ہے۔ فریٹ ٹرین بھی نفعے میں ہو گئی ہے۔ یہ میرا پانچ سال کا ٹارگٹ تھا جو ہم نے ڈیڑھ سال میں حاصل کیا ہے۔

کہا کہ اگر پیسنجر ٹرینیں آ گئیں تو 138 کو 150 تک لے کر جاؤں گا۔ کوشش کروں گا کہ فریٹ ٹرینیں 16 سے 20 ہو جائیں۔

اگر اللہ کو منظور ہوا تو اس ریلوے کا خسارہ ختم کروں گا۔ جب ایم ایل ون چلے گی تو ملک کی اکانومی بھی بڑھے گی۔ لاہور سے کراچی لوگ 8 گھنٹے میں پہنچیں گے۔ اس کا ساری کریڈٹ ریلوے کے مزدوروں کو جاتا ہے۔

مولانا فضل الرحمان کے مارچ کے حوالے سے انہوں کہا کہ مذاکرات کے جب دروازے بند ہوتے ہیں تو حادثات ہوتے ہیں۔ ہماری طرف سے دروازے کھلے ہیں۔ مولانا بتائیں کہ حکومت نے کہاں غلطی کی ہے۔

24 گھنٹے پہلے جہاں کشمیر کی بات ہو رہی تھی اب مولانا کی بات ہو رہی ہے میں کہتا ہوں کہ یہ وقت احتجاج کا نہیں ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers