قومی

اشتعال انگیز تقریر پر کیپٹن (ر) صفدر گرفتار، آج عدالت میں پیش کیا جائے گا

نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر لاہور کے راوی ٹول پلازہ سے گرفتار۔ ایکشن احتساب عدالت کے باہر اداروں کے خلاف اشتعال انگیز تقریر پر ہوا۔ آج ضلع کچہری میں پیش کیا جائے گا۔

مسلم لیگ ن کی لیڈر مریم نواز کے شوہر اور سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کو لاہور کے راوی ٹول پلازہ سے گرفتار کیا گیا۔

پولیس کا مؤقف ہے کہ ریاستی اداروں کے خلاف اشتعال انگیز تقاریر کرنے پر کیپٹن (ر) صفدرکے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تھا اور یہ مقدمہ 11 اکتوبر کے بعد اسلام پورہ تھانہ میں 123 اے کے تحت درج ہوا تھا۔

ذرائع کے مطابق مقدمے کے بعد انہیں گرفتاری دینے کا کہا بھی گیا تھا تاہم وہ پیش نہ ہوئے۔ اس لیے پولیس نے انہیں گرفتار کر لیا۔

کیپٹن (ر) صفدر کو آج ضلع کچہری میں پیش کیا جائے گا۔ ان کی جانب سے ضمانت کی درخواست بھی دائر کی جائے گی۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ کیپٹن (ر) صفدر نے کچھ دنوں پہلے مریم نواز کی عدالت میں‌ پیشی کے موقع پر پولیس پر حملہ بھی کیا تھا اور اس کیس میں گرفتاری سے بچنے کے لیے انہوں نے ضمانت بھی کرائی تھی۔

دوسری جانب کیپٹن (ر) صفدر نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو زہر دیے جانے کا خدشہ بھی ظاہر کیا تھا۔

مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کا اس گرفتاری پر کہنا ہے کہ عمران صاحب کے حکم پر کیپٹن صفدر کی گرفتاری آمرانہ فسطائی سوچ ہے۔
والد ہسپتال میں اور بیٹے کو گرفتار کرلینا، چھوٹی ذہنیت کے حکمرانوں کی کم ظرفی کا ایک اور نمونہ ہے۔

اگر کیپٹن (ر) محمد صفدر کو نفرت انگیز تقریر پر گرفتار کیا گیا ہے تو پہلے عمران صاحب کو گرفتار کیا جائے

ایک اور ٹویٹ میں ان کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کی آواز اٹھانے پر کیپٹن (ر) محمد صفدر کو اغوا کیا گیا۔ ان کو فوری قانونی عدالت میں پیش کیا جائے۔ وہ عمران صاحب کے سیاسی انتقام کا نشانہ بنے ہیں۔

کیپٹن (ر) محمد صفدر کو خراش بھی پہنچی تو اس کے ذمہ دار عمران صاحب ہوں گے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers