قومی

وفاقی کابینہ کا اجلاس، نیب آرڈیننس میں ترمیم کی منظوری

وفاقی کابینہ اجلاس نے نیب آرڈیننس میں ترمیم کی منطوری دے دی۔ ڈاکترز کی ہڑتال کا بھی تذکرہ۔ وزیراعظم ہسپتالوں میں اصلاحات کے نفاذ کے لیے پر عزم۔ بڑھتی ہوئی مہنگائی پر نوٹس۔ وزیراعظم کا اظہار برہمی۔ ذمےدار اداروں کے خلاف کارروائی کی ہدایت۔

آج وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اسلام آباد میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں نیب آرڈیننس، آزادی مارچ،  معاشی صورت حال،  قرضوں کی انکوائری کیلئے بنے کمیشن، مہنگائی اور دیگر امور پر بحث ہوئی۔

وفاقی کابینہ کی جانب سے 6 نئے قوانین آرڈیننس کے ذریعے نافذ کرنے کی منظوری دے دی گئی۔ اس میں نیب ترمیمی آرڈیننس اور بے نامی ٹرانزیکشن ایکٹ 2017 کے ترمیمی آرڈیننس کی منظوری بھی شامل ہے۔

اس کے علاوہ خواتین کو وراثت میں حقوق فراہم کرنے، لیگل ایڈ اور جسٹس اتھارٹی کا قیام، وراثتی سرٹیفکیٹ، اعلیٰ عدلیہ کے کوڈ آف کنڈکٹ سے متعلق آرڈیننس بھی شامل ہیں۔

نیب آرڈیننس میں ترمیم کے بعد 5 کروڑسے زائد کرپشن کے الزام میں گرفتار شخص کو صرف سی کلاس ہی دی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق  اجلاس میں آزادی مارچ روکنے کے لئے بنائی گئی مذاکراتی کمیٹی نے بھی اپنی رپورٹ دی۔

ذرائع کے مطابق جے یو آئی کے ممکنہ آزادی مارچ و لاک ڈاؤن سے متعلق کابینہ ارکان کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان کے مقاصد غیر واضح اور مشکوک ہیں۔ بظاہر مولانا کا مقصد سیاسی نہیں بلکہ کسی خاص ایجنڈے کی تکمیل ہے۔

اس کے علاوہ  اجلاس میں ملک کی معاشی صورت حال کا بھی جائزہ لیا گیا۔

اجلاس میں ڈاکٹرز کی ہڑتال کا بھی تذکرہ کیا گیا۔ وزیراعظم نے ہسپتالوں میں اصلاحات کے نفاذ کے لیے پر عزمی کا اظہار کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے مہنگائی پر برہمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے  ذمےدار اداروں کے خلاف کارروائی کی ہدایت بھی کی۔

 

 

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers