بزنسقومی

عالمی بینک کی ایز آف ڈوئنگ بزنس رپورٹ میں پاکستان کی 28 درجے بہتری

پاکستان کی بڑی کامیابی۔ کاروباری آسانیوں کے حوالے سے عالمی بینک کی رپورٹ میں 28 درجے بہتری۔ ایز آف ڈوئنگ بزنس ریفارمز میں بھارت اور بنگلہ دیش کو پیچھے چھوڑ دیا۔ وزیراعظم عمران خان کہتے ہیں کہ وہ تمام لوگ مبارکباد کے مستحق ہیں جنہوں نے محنت کر کے اس بہتری کو ممکن بنایا۔

عالمی بینک کی جانب سے ایز آف ڈوئنگ بزنس رپورٹ 2020 جاری کردی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان 190 ممالک کی فہرست میں 136 ویں سے 108 ویں نمبر پر آگیا ہے۔ اس لحاظ سے پاکستان نے بھارت اور بنگلہ دیش کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے۔

اس کے علاوہ پاکستان ٹاپ 10 اصلاحات کرنے والے ممالک میں بھی شامل ہو گیا ہے۔

درجے میں بہتری کی وجہ وفاق اور صوبوں کی جانب سے کی جانے والی جامع اصلاحات ہیں۔ وفاق، سندھ اور پنجاب نے نمایاں اصلاحات کی ہیں۔

دوسری جانب سماجی رابطے کی ویبسائٹ ٹویٹر پر وزیراعظم پاکستان عمران خان کا کہنا تھا کہ “کاروبار میں آسانی” کی صورت میں ہمارے منشور کا ایک اور وعدہ ایفاء ہوگیا ہے۔ عالمی بنک کی “ای او ڈی بی رینکنگ” میں پاکستان کو تاریخ کی سب سے بڑی بہتری میسرآئی ہے۔ گزشتہ ایک دہائی کے دوران پاکستان پھسلتا ہوا 50 درجے نیچے آ گیا تھا۔ اب 28 درجوں کی بہتری کے ساتھ ہم 136 سے 108 پر آچکے ہیں۔

ایک اور پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ میں حکومت کے ان تمام لوگوں کو جنہوں نے اسے ممکن بنانے کیلئے نہایت محنت کی ہے ان کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ مگر طویل مسافت ابھی باقی ہے۔ انشاءاللہ 2020 سے قبل پاکستان سرمایہ کاری کیلئے موزوں ترین ممالک میں سے ایک ہو گا۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ وزیراعظم عمران خان کی معاشی ٹیم کے لوگوں کا دعویٰ ہے کہ حکومت کے مشکل فیصلوں کی وجہ سے پاکستان درست معاشی سمت میں چل پڑا ہے اور اس کے علاوہ آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کی جانب سے پاکستان کے معیشت کے حوالے سے اقدامات کو سراہا جا رہا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers