قومی

صدر پاکستان اور وزیراعظم عمران خان کا کشمیریوں سے اظہار یکجہتی

پاکستانی قیادت کا کشمیریوں سے اظہار یکجہتی۔ صدر پاکستان عارف علوی کہتے ہیں کہ کشمیر تقسیم ہند کا نا مکمل ایجنڈہ ہے، ہر فورم پر مقدمہ لڑیں گے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر بڑی جیل میں تبدیل ہو چکا۔ نام نہاد جمہوریت کے دعویدار بھارت کا اصل چہرہ پوری دنیا نے دیکھ لیا۔ وزیر خارجہ کا صبرو استقلال پر کشمیریوں کو سلام۔

یوم سیاہ کے موقع پر صدر پاکستان عارف علوی کا کہنا ہے کہ کشمیر تقسیم ہند کا نا مکمل ایجنڈہ ہے۔  کشمیریوں کا مقدمہ پاکستان کا مقدمہ ہے۔ ہم ہر فورم پر کشمیریوں کا مقدمہ لڑیں گے۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی پالیسیوں اور تدابیر میں کتنا ہی ظلم وبربریت کیوں نہ شامل ہو، وہ کشمیری عوام کے جذبہ حق خود ارادیت کو کچل نہیں سکتا۔

72 سال پہلے آج ہی کے دن بھارتی فوج نے بین الاقوامی قوانین اور اخلاقیات کی دھجیاں بکھیری تھیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں جونہی کرفیو اٹھے گا تو کشمیری پھر سے اپنے جذبات کی عکاسی کریں گے۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہ مقبوضہ جموں و کشمیر دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل ہو چکا ہے۔ 27 اکتوبر1947 کو بھارت نے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کشمیر پر قبضہ کیا۔

5 اگست کو بھی بھارت نے ایک اور سفاک قدم اٹھا کر مقبوضہ کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت ختم کر کے اسے بھارت کا حصہ بنانا چاہا اور اس کے بعد سے وادی میں مسلسل کرفیو مسلط ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں ادویات اور اشیائے خورد نوش کی شدیدقلت ہے۔ ہزاروں افراد جابرانہ حراست میں لیے گئے۔ ہزاروں نوجوانوں کو اغواء کر کے نا معلوم مقام پر قید کیا گیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ کشمیریوں کے ساتھ غیر انسانی اور تضحیک آمیز سلوک جاری ہے۔ بھارت کی ریاستی دہشت گردی آج پہلے سے کہیں زیادہ سفاکانہ شکل اختیار کرگئی ہے جس سے نام نہاد” بڑی جمیوریت” ہونے کے دعویدار بھارت کا اصل چہرہ بے نقاب ہوچکا ہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا بھی کہان  ہے کہ 72 سال پہلے بھارتی فوج سری نگر پر قبضے اور جموں وکشمیر میں جبر کے لیے اتری تھی۔  بھارت نے اپنے قبضے سے کشمیر کو عملاً جیل میں تبدیل کردیا گیا ہے۔ ھارت کے ہاتھ معصوم اور بے گناہ لوگوں کے خون میں رنگے ہیں۔ وزیر خارجہ کا صبرو استقلال پر کشمیریوں کو سلام۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers