قومی

وفاقی کابینہ کا اجلاس، آزادی مارچ پر غور و فکر

 

آزادی مارچ پر غور کے لیے وفاقی کابینہ نے سر جوڑ لیے۔ وزیردفاع پرویز خٹک کی اپوزیشن سے مذاکرات پر بریفنگ۔ اکلاس میں 16 نکات پر گور کیا جائے گا۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس آج اسلام آباد میں ہو گا۔  اجلاس میں ملکی سیاسی، معاشی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔ اپوزیشن کے آزادی مارچ پر بھی اجلاس میں بات چیت ہوگی۔

اجلاس میں وزیردفاع پرویز خٹک اپوزیشن سے ہونے والے مذاکرات کے حوالے سے بریفنگ دیں گے۔ ان کی جانب سے پیش کی جانے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آزادی مارچ ایک معاہدے کے تحت ہورہا ہے۔ رہبرکمیٹی میں تمام جماعتوں سے رابطے ہوئے۔ آزادی مارچ والوں کو معاہدے کے نکات کی پابندی کرنا ہوگی۔

ذرائع کے مابق اب تک ہونے والے اجلاس میں لاہور، ملتان، کراچی اور پشاور میں کثیرمنزلہ عمارتوں کی تعمیرکی پالیسی کی منظوری دے دی گئی ہے۔

اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ کے تحت خصوصی کمیٹی بنانے کی منظوری بھی دی گئی اور ایف اے ٹی ایف سیکرٹریٹ بنانے پر بھی اصولی اتفاق کر لیا گیا ہے۔

وفاقی کابینہ اجلاس میں وزارتوں میں موجود سی ای او ز، ایم ڈیز کی خالی پوسٹوں پر بریفنگ دی جائے گی۔ سینٹرل ڈائریکٹوریٹ آف نیشنل سیونگز کے ڈی جی کی تنخواہ مقرر کرنے کی منظوری بھی دی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق کابینہ چیئرمین متروکہ وقف املاک کو گرانٹ جاری کرنے کی بھی منظوری دے گی۔

آپ کو بتاتے چلین کہ اس سے قبل ہونے والے اجلاس میں وفاقی کابینہ کی جانب سے 6 نئے قوانین آرڈیننس کے ذریعے نافذ کرنے کی منظوری دے دی گئی تھی۔ اس میں نیب ترمیمی آرڈیننس اور بے نامی ٹرانزیکشن ایکٹ 2017 کے ترمیمی آرڈیننس کی منظوری بھی شامل ہے۔

نیب آرڈیننس میں ترمیم کے بعد 5 کروڑسے زائد کرپشن کے الزام میں گرفتار شخص کو صرف سی کلاس ہی دی جائے گی۔

اس کے علاوہ وزیراعظم عمران خان نے مہنگائی پر برہمی کا اظہار کیا تھا۔ انہوں نے  ذمےدار اداروں کے خلاف کارروائی کی ہدایت بھی کی تھی۔

 

 

Comment here

instagram default popup image round
Follow Me
502k 100k 3 month ago
Share