بین الاقوامی

سدھو کو ویزہ تو مل گیا لیکن مودی سرکار سے اجازت نہ ملی

کرتارپور، محبت کی راہداری۔ وزیراعظم عمران خان نے گردوارہ گرونانک تک رسائی دے کر سکھ برادری کے دل جیت لیے۔ بھارت میں اظہار تشکر کے لیے نغمے بننے لگے، جالندھر میں کپتان کے پوسٹرز آویزاں۔نوجوت سنگھ سدھو کو ویزہ تو مل گیا، تقریب میں شرکت کے لیے تا حال مودی سرکار سے اجازت نہ ملی۔

گردوارہ گرونانک کے افتتاح کی تیاریاں حتمی مراحل میں
داخل ہو چکی ہیں۔ کل وزیراعظم عمران خان 9 نومبر کو اس کا با ضابطہ افتتاح کریں گے۔

دنیا بھر سے سکھ برادری سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی آمد کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔ اسی حوالے سے بھارت کے نامور سیاست دان اور سابق کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو بھی پاکستان آنا چاہ رہے ہیں۔

نوجوت سنگھ سدھو کو پاکستان آنے کے لیے ویزہ تو جاری کر دیا گیا ہے مگر افتتاحی تقریب میں شرکت کی اجازت ابھی تک یقینی نہیں ہو سکی۔

بھارتی حکومت کرتارپور راہداری کی افتتاحی تقریب میں شرکت کے لئے سدھو کو اجازت دینے میں دیری کررہی ہے۔

ذرائع کے مطابق نوجوت سنگھ سدھو نے سینٹر فیصل جاوید سے ٹیلیفونک رابطہ کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میں دربار صاحب کے افتتاحی تقریب میں شرکت کیلئے نہایت بے قرار ہوں۔ دنیا بھرمیں رہنے والے کروڑوں سکھ اپنی مقدس دھرتی کی زیارت کیلئے بیتاب ہیں۔

نوجت سنگھ سدھونے بھارت کی وفاقی حکومت سے گزارش کی ہے کہ انہیں 9 نومبرکو کرتارپور راہداری کے راستے گوردوارہ دربار صاحب ، کرتارپور پاکستان جانے کی اجازت دی جائے۔ انہوں نے بھارتی وزیر خارجہ سبرامنئیم جے شنکر کو ایک ہفتے میں دوسرا خط بھیجا ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ وزیراعظم عمران خان نے نوجوت سنگھ سدھو کو افتتاحی تقریب میں شرکت کی دعوت دی تھی۔ اس سے پہلے بھی نوجوت سنگھ سدھو دو مرتبہ پاکستان آ چکے ہیں۔ پہلے دفع انہوں نے وزیراعظم عمران خان کی خلف برداری کی تقریب جبکہ دوسری دفع انہوں نے کرتار پور راہداری منصوبے کی بنیاد رکھنے کی تقریب میں شرکت کی تھی۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے کرتار پور راہداری کھول کر پوری دنیا سے سکھ برادری کی حمایت حاصل کر لی ہے۔ بھارت میں سکھوں کی جانب سے ان کے لیے نغمے گائے جا رہے ہیں تو کہیں بھارت کے اندر پوسٹرز پر ان کی تصویر آویزاں کی جا رہی ہے۔

بھارتی پنجاب کے مختلف علاقوں میں وزیراعظم عمران خان اور نوجوت سنگھ سدھو کے پوسٹرز اور بینرز آویزاں کیے گئے ہیں جن میں کرتارپور راہداری کے معاملے پر دونوں شخصیات کو ہیرو قرار دیا گیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کے اس احسن اقدام نے پوری دنیا میں پاکستان کی ایک مثبت تصویر بیان کی ہے۔ اس سے سکھوں میں پاکستان کے لیے محبت اور پیار مزید بڑھا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers