قومی

مولانا کے بیٹے اسد محمود نے علی امین گنڈاپور کا چیلنج قبول کر لیا

قومی اسمبلی میں علی امین گنڈاپور اور مولانا فضل الرحمان کے بیٹے اسد محمود کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ۔ مولانا اسد محمود نے دوبارہ انتخابات کا چیلنج قبول کرلیا۔ بولے علی امین گنڈاپور اپنی نشست خالی کر کے دوبارہ الیکشن لڑ لیں۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں حکومتی اور اپوزیشن ارکان کے درمیان آج خاصی گرما گرمی دکھائی دی۔ دونوں اطراف سے ایک دوسرے پر طنز بھرے جملوں کا تبادلہ ہوتا رہا۔

پی ٹی آئی رہنماء اور وفاقی وزیر علی امین گنڈا پور نے بولتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان پولنگ اسٹیشنز میں کیمرے لگا کر الیکشن لڑ لیں۔ میں آج بھی اپنے چیلنج پر قائم ہوں۔ مولانا پہلے دھرنا ختم کریں۔

مولانا فضل الرحمان کے بیٹے اسد محمود نے کہا کہ میں چیلنج قبول کرتا ہوں،میں بھی استعفیٰ دیتا ہوں، آپ بھی دیں اور کل ہی الیکشن لڑ لیتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب پیچھے نہیں ہٹنا، استعفے کا اعلان کرو۔ عوام کے پاس جاتے ہیں، دودھ کا دودھ، پانی کا پانی ہوجائے گا۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ آپ ان لوگوں کے کندھوں پر بیٹھ کر آئے ہیں جنھوں نے آئین کو توڑا۔

آپ کو بتاتے چلیں کہعلی امین گنڈا پور نے عام انتخابات 2018 میں این اے 38 ڈیرہ اسماعیل خان سے مولانا فضل الرحمان کو 34 ہزار 779 ووٹوں کے مارجن سے شکست دی تھی۔

مولانا فضل الرحمان کے دھاندلی کا شور مچانے پرعلی امین گنڈا پور مولانا کو دوبارہ الیکشن لڑنے کا چیلنج بھی کر چکے ہیں۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers