قومی

بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے اعلیٰ سرکاری افسروں کے فائدہ اٹھانے کا انکشاف

بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھانے والوں میں اعلی افسروں کے شامل ہونے کا انکشاف۔ گریڈ 17 سے 21 تک کے 2543 افسروں کی بیویاں وظیفہ وصول کر رہی تھیں۔ وزیرِ سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کی مذمت۔ کہا کوئی شرم ہوتی ہے، کوئی حیا ہوتی ہے۔ غریبوں کے حق پہ ڈاکا ڈالنے والوں کو کیا کہا جائے۔

بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھانے والے غیرمستحق افراد سے متعلق تہلکہ خیز تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ انکشاف ہوا ہے کہ چاروں صوبوں اور وفاق سے اعلیٰ سرکاری افسران بھی بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھاتے رہے۔

مجموعی طور پر 2 ہزار 543 افسران کو بی آئی ایس پی کی فہرست سے نکالا گیا ہے۔ سب سے زیادہ بلوچستان اور سندھ کے افسران نے بی آئی ایس پی کے ذریعے رقوم وصول کیں۔

بلوچستان سے 741 سرکاری افسران نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھایا۔ سندھ میں گریڈ 18 کے 342 افسران نے بھی بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھایا۔ بی آئی ایس پی سے مستفید ہونیوالوں میں گریڈ 21 کے 3 افسران بھی شامل ہیں۔

گریڈ 20 کے 59 افسران سہہ ماہی وظیفہ وصول کرتے رہے۔ بی آئی ایس پی کے 6 افسران بھی سکیم سے مستفید ہوئے۔ گریڈ 17 کے ایک ہزار 240 افسران نے بھی بہتی گنگا میں ہاتھ دھوئے۔

اعلیٰ سرکاری افسران اپنی بیویوں کے نام پر بی آئی ایس پی سے پیسے وصول کرتے رہے۔ غیر مستحق افراد کو بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے نکالنے کا عمل جاری ہے۔

اس حوالے سے وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا مذمت کعتے ہوئے کہنا ہے کہ کوئ شرم ہوتی ہے، حیا ہوتی ہے۔ غریب ترین لوگوں کے حق پر اس بے حیائ سے ڈاکہ ڈالنے کو کیا کہا جائے۔

دوسری جانب ذرائع کے مطابق حکومت نے کنٹرول لائن پر مقیم شہریوں کو بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے ذریعے ریلیف پیکیج دینے جبکہ 33498 شادی شدہ عورتوں کوبھی اس پروگرام میں شامل کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

 

Comment here

instagram default popup image round
Follow Me
502k 100k 3 month ago
Share