قومی

مصوم لوگوں کو نشانہ بنانے والے مسلمان نہیں ہو سکتے: آرمی چیف جنرل قمر باجوہ

عسکری قیادت کی کوئٹہ دھماکے کی مذمت۔ جنرل قمر جاوید باجوہ کہتے ہیں کہ مساجد میں مصوم لوگوں کو نشانہ بنانے والے مسلمان نہیں ہو سکتے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر بولے، فوج پولیس انتظامیہ کو ہر ممکن تعاون فراہم کر رہی ہے۔ نیول چیف کی بھی دہشتگردی حملے کی مذمت۔

کوئٹہ دھماکے پر پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ جن لوگوں نے مسجد میں معصوم لوگوں کو نشانہ بنایا ہے وہ سچے مسلمان نہیں ہو سکتے۔

سماجی رابطے کی ویبسائٹ ٹویٹر پر پاک فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا کہ کوئٹہ دھماکے کے حوالے سے آرمی چیف نے ہدایت کی ہے کہ پولیس اور سول انتظامیہ کو ہر ممکن سہولت فراہم کی جائے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا مزید کہنا تھا کہ کوئٹہ کے علاقے سیٹلائٹ ٹاؤن کی مسجد میں ہونے والے بم دھماکے کے بعد ایف سی بلوچستان کے جوان کوئٹہ میں دھماکا کی جگہ پر پہنچ گئے ہیں۔

ان کا پولیس کے ساتھ مشترکہ سرچ آپریشن جاری ہے۔ علاقے کو گھیرے میں لے لیا گیا ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ کوئٹہ کے علاقے سیٹلائٹ ٹاؤن کی مسجد میں ہونے والے زودار دھماکے میں‌ ڈی ایس پی امان اللہ سمیت 15 افراد شہید جبکہ متعدد ہوئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق شہید ہونے والے ڈی ایس پی امان اللہ اسحاق زئی یکم اپریل 1963 کو پیدا ہوئے اور یکم دسمبر 1988 میں بطور اے ایس آئی انہوں نے اپنے پولیس کیریئر کا آغاز کیا۔

امان اللہ اسحاق زئی نے پانچ اکتوبر 2012 کو ڈی ایس پی کے عہدے پر ترقی پائی اور اس وقت پولیس ٹریننگ کالج سریاب روڈ میں تعینات تھے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers