بین الاقوامی

ایران نے یوکرینی طیارے مار گرانے کا اعتراف کر لیا

ایران نے یوکرینی طیارے مار گرانے کا اعتراف کر لیا۔ ایرانی صدر حسن روحانی کا متاثرین نے اظہارِ تعزیت۔ ٹویٹر پیغام میں کہا کہ تحقیقات سے پتہ چلا یوکرینی طیارہ انسانی غلطی سے تباہ ہوا۔ یہ ناقابلِ معافی غلطی ہے۔ وزیرِ خارجہ جواد ظریف کہتے ہیں کہ آج افسوسناک دن ہے۔ امریکہ کی جانب سے کشیدگی بڑھانے کے باعث انسانی غلطی ہوئی۔

ایران نے یوکرین کے مسافر طیارے کو غلطی سے نشانہ بنانے کا اعتراف کر لیا ہے۔ سماجی رابطے کی ویبسائٹ ٹویٹر پر اپنے جاری بیان میں ایرانی صدر حسن روحانی نے بھی میزائل فائر کیے جانے کو انسانی غلطی قرار دیا اور کہا کہ یہ ناقابلِ معافی غلطی ہے۔ عظیم سانحے کے ذمہ داروں کو سامنے لانے اور ان کے خلاف قانونی کارروائی کے لیے تحقیقات جاری ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ متاثرہ خاندانوں سے معذرت چاہتے ہیں۔ طاقت کے گھمنڈ میں مبتلا مہم جو امریکا پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔

 

ایرانی خبر ایجنسی کے مطابق حکام کا کہنا ہے کہ طیارے کو ملٹری کی جانب سے مار گرانا انسانی غلطی تھی۔ طیارہ حساس ملٹری اسٹرائیک کے پاس سے گزرتے ہوئے نشانہ بنا۔

ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے کہا کہ ایرانی فورسز کی جانب سے ابتدائی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ طیارے کو غلطی سے نشانہ بنایا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ آج ایک اداس دن ہے۔ ایران کو افواج کی ابتدائی تحقیقات سے اپنی غلطی کا پتا چلا۔

انہوں نے کہا کہ یوکرین کا مسافر طیارہ پاسدران انقلاب کی ملٹری سینٹر کے قریب سے گزر رہا تھا۔ یوکرین کے مسافر طیارے کی ساخت دشمن کے جنگی طیارے جیسی تھی۔

بولے کہ متاثرہ خاندانوں اور متاثرہ اقوام سے بہت معذرت خواہ ہوں اور ان سے تعزیت کرتا ہوں۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ کچھ دن قبل ایران کے دارالحکومت تہران کے انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر یوکرین کا بوئنگ 737 مسافر طیارہ ٹیک آف کے چند منٹ بعد ہی گرکر تباہ ہوگیا تھا۔ واقعے میں 176 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

ذرائع کے مطابق مسافر طیارہ تہران سے یوکرین کے دارالحکومت کیف جا رہا تھا۔ طیارے میں 82 ایرانی اور 63 کینیڈین شہری سوار تھے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers