قومی

وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی کشیدگی کم کرنے کے لیے ایران روانہ

مشرقی وسطیٰ میں کشیدگی کم کرانے کا مشن لیے وزیرِ خارجہ ایران روانہ۔ ایرانی ہم منصب سے ملاقات میں خطے میں حالیہ صورتحال پہ تبادلہ خیال کریں گے۔ کل سعودی عرب بھی جائیں گے۔ شاہ محمود قریشی کہتے ہیں کہ خطے کی امن و سلامتی کو لاحق خطرات سے مقابلے کے لیے اجتماعی کوششوں کی ضرورت ہے۔

مشرقِ وسطیٰ میں موجودہ صورتحال سے یمٹنے کے لیے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی ایران اور سعودی عرب کے دورے پر روانہ ہوگئے ہیں۔ دورے پر سیکرٹری خارجہ سہیل محمود اور وزارت خارجہ کے سینئر حکام بھی وزیرخارجہ کے ہمراہ ہیں۔

وزیرِ خارجہ ساہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ کشیدگی میں کمی لانے اور مسائل کے پرامن حل کے لیے فوری طور پر اجتماعی کوششوں کی ضرورت ہے۔ کشیدگی میں کمی لانے اور سفارتی ذرائع سے مسائل کا حل تلاش کرنے کی جملہ کوششوں کی حمایت کی جائے۔ ملاقات میں حالیہ صورتحال پر پاکستان کے نقطہ نظر سے آگاہ کروں گا۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی ایران میں اپنے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف سے ملاقات کریں گے۔ ملاقات میں وہ مشرق وسطی اور خلیجی خطے میں وقوع پذیر صورتحال پر تبادلہ خیال کریں گے۔

کل شاہ محمود قریشی سعودی عرب کے لیے روانہ ہوں گے جہاں ریاض میں سعودی وزیر خارجہ سے بھی ملاقات کریں گے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ وزیراعظم عمران خان نے چند روز قبل سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو ہدایت کی ہے کہ وہ ایران، سعودی عرب اور امریکا کا دورہ کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ میں نے ہدایات دی ہیں کہ وزیرخارجہ ایران، سعودی عرب اور امریکہ جاکر ان ممالک کے وزرائے خارجہ سے ملیں جبکہ آرمی چیف متعلقہ عسکری قائدین سے روابط قائم کریں اور واضح پیغام دیا جائے کہ پاکستان امن کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کو تو تیار ہے مگر وہ دوبارہ کسی بھی جنگ کا حصہ نہیں بن سکتا۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ 3 جنوری کو بغداد ایئر پورٹ پر امریکی راکٹ حملے میں ایرانی جنرل قاسم سلیمانی سمیت 8 افراد جاں بحق ہو گئے تھے۔

پینٹاگون کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے احکامات پر ایرانی جنرل کو نشانہ بنایا گیا۔ یہ کارروائی ایران کو مستقبل میں حملوں سے روکنے کے لیے کی گئی ہے۔

اس حوالے سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی نے ہزاروں امریکیوں کو قتل اور زخمی کیا۔ قاسم سلیمانی مزید کئی امریکیوں کو مارنے کی منصوبہ کر رہے تھے۔ وہ براہ راست یا بلا واسطہ لاکھوں لوگوں کے قتل کا ذمہ دار تھے۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی کو جنگ شروع کرنے کیلئے نہیں بلکہ جنگ ختم کرنے کیلئے مارا ہے۔ ہم نے گزشتہ رات جو کیا وہ بہت پہلے ہی ہو جانا چاہیے تھا اور کئی انسانی جانیں محفوظ ہوتیں۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers