قومی

ڈاکٹر عدنان نے نواز شریف کی میڈیکل رپورٹس متعلقہ وزارت کو بھجوا دیں

سابق وزیراعظم نواز شریف کی میڈیکل رپورٹس متعلقہ وزیراور محکمے کو بھجوا دی گئی ہیں۔ ڈاکٹر عدنان کا ٹویٹر پر جواب۔ میڈیکل رپورٹس بھی شئیر کیں۔ مریم اورنگزیب کہتی ہیں کہ یاسمین راشد نے دباؤ میں آ کر سیاسی تماشہ کیا۔ انہیں خدشات ہیں تو خود لندن چلی جائیں۔

ذرائع کے مطابق وزارتِ داخلہ کی جانب سے نواز شریف کو خط لکھ کر  میڈیکل رپورٹس کے بارے میں استفسارکیا اور رپورٹس فوری بھجوانے کا حکم دیا۔

نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ نواز شریف کی تمام میڈیکل رپورٹس ہسپتال کے سرٹیفیکیٹس کے ساتھ حکام کو دے دی گئی ہیں اور اس کے ساتھ ہی متعلقہ اداروں اور وزیر کو بھی پہنچا دی گئی ہیں۔

انہوں نے میڈیکل رپورٹس کی کاپی بھی ساتھ شئیر کیں۔

مسلم لیگ ن کی رہنماء مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ عدالتی حکم کے مطابق ڈاکٹرز کی تصدیق شدہ رپورٹس عدالت اور پنجاب حکومت کو شیڈول کے مطابق بھجوائی جارہی ہی ہیں۔ یاسمین راشد نے نواز شریف کے ٹیسٹ کی رپورٹ موجود ہونے کے باجود سیاسی تماشا کیا۔ یاسمین راشد نے عمران خان کے دباؤ میں آکر جھوٹ پر مبنی سیاسی پریس کانفرنس کی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ یاسمین راشد کو کوئی خدشات ہیں تو خود لندن چلی جائیں۔

آپ کو بتاتے چلین کہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے پنجاب کی صوبائی وزیر برائے صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا کہ 25 دسمبر کو نواز شریف کی ضمانت کا وقت ختم ہوگیا تھا۔ 25 دسمبر تک کسی قسم کی رپورٹ نہیں بھیجی گئی۔

بولیں کہ نواز شریف کو کس بنیاد پر مزید وقت دیا جائے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا نواز شریف کے معالج کی جانب سے خط لکھا گیا۔ خط میں نواز شریف کی پرانی بیماریوں کی تفصیلات بتائی گئیں۔ رپورٹس میں جن بیماریوں کا ذکر ہے ہم پہلے سے جانتے ہیں۔

انہوں نے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کل نواز شریف کی تصویر دیکھنے کے بعد ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو کل فون کیا اور ان سے کہا کہ کیا یہ سیر بھی علاج کا حصہ ہے۔ بیٹی کہتی ہے کہ تیمار داری کرنے جانا ہے۔ کیا ریسٹورنٹ میں تیمار داری کی جائے گی؟

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers