قومی

وزیراعظم عمران خان کی بےنظیرانکم سپورٹ پروگرام سے پیسہ لینے والے افسروں کے نام سامنے لانے کی ہدایت

انکم سپورٹ پروگرام سے سرکاری افسران کے رقم لینے کا معاملہ۔ پروگرام سے نکالے گئے سرکاری افسروں کی رپورٹ وزیراعظم کو پیش کر دی گئی۔
بے نظیرانکم سپورٹ پروگرام میں فراڈ پر وزیراعظم برہم، کارروائی کی ہدایت کر دی۔ وزیراعظم نے ملوث سرکاری افسران کے نام قوم کے سامنے لانے کی ہدایت کر دی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ غرباء کے نام پر فراڈ کرنے والوں سے رعایت نہ برتی جائے۔ اثرسرکاری افسران کے نام پردے میں نہیں رہیں گے۔ غریبوں کاحق لوٹنے والوں کو چھوٹ نہیں دے سکتے۔ لوٹ مار کرنے والوں کے نام قوم کے سامنے لائے جائیں۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم کی ہدایت پرعملدرآمد فوری شروع کیا جارہا ہے۔ ہدایت کی روشنی میں کارروائی بھی ہوگی۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھانے والے غیرمستحق افراد سے متعلق تہلکہ خیز تفصیلات سامنے آئی تھیں۔ انکشاف ہوا تھا کہ چاروں صوبوں اور وفاق سے اعلیٰ سرکاری افسران بھی بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھاتے رہے ہیں۔

مجموعی طور پر 2 ہزار 543 افسران کو بی آئی ایس پی کی فہرست سے نکالا گیا ہے۔ سب سے زیادہ بلوچستان اور سندھ کے افسران نے بی آئی ایس پی کے ذریعے رقوم وصول کیں۔

بلوچستان سے 741 سرکاری افسران نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھایا۔ سندھ میں گریڈ 18 کے 342 افسران نے بھی بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھایا۔ بی آئی ایس پی سے مستفید ہونیوالوں میں گریڈ 21 کے 3 افسران بھی شامل ہیں۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers