قومی

وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی امریکہ روانہ

مشرقِ وسطیٰ کے امن کو بچانے کا مشن، وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی امریکہ چلے گئے۔ مائیک پومپیو سے ملاقات میں امریکہ ایران کشیدگی پر بات چیت ہو گی۔ دو طرفہ تعلقات، مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم پر بھی تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی 15 سے 17 جنوری تک تین روزہ امریکا کا دورہ کرینگے۔ شاہ محمود قریشی امریکہ کے لیے روانہ ہو گئے ہیں۔ شاہ محمود قریشی نیویارک میں امریکی دورے کے دوران اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس اور جنرل اسمبلی کے صدر تجانی محمد سے ملاقات کریں گے۔

وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی مقبوضہ کشمیر پر اقوام متحدہ سلامتی کونسل کے اجلاس میں شرکت کریں گے۔ شاہ محمود قریشی اجلاس اور اہم ملاقاتوں میں مسئلہ کشمیر اجاگر کریں گے۔ ساتھ ہی ساتھ وہ وہاں ہونے والے بھارتی مظالم کو بھی بےنقاب کریں گے۔

اس کے علاوہ وزیرِ خارجہ واشنگٹن میں اپنے ہم منصب مائیک پومپیو، مشیرقومی سلامتی رابرٹ اوبرائن سمیت کیپٹل ہل میں امریکی تھنک ٹینک اورصحافیوں سے ملیں گے۔

دفتر خارجہ کے مطابق وزیر خارجہ کے دورہ امریکا کا مقصد مشرق وسطیٰ میں جاری کشیدگی میں کمی کی کوشش ہے۔ شاہ محمود قریشی امریکی حکام کیساتھ ملاقاتوں میں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال اور کشمیریوں پر بھارتی مظالم سے بھی آگاہ کرینگے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ اس سے قبل وزیرِ خارجہ نے ایران کا دورہ یا تھا۔ ایرانی وزیرِ خارجہ جواد ظریف سے ملاقات کے دوران ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے ایران کے ساتھ گہرے مذہبی، تاریخی اور ثقافتی تعلقات ہیں۔ پاکستان ایران کے ساتھ تعلقات کو اہمیت دیتا ہے۔ ایران امریکا کشیدگی کا معاملہ افہام و تفہیم سے حل کرنے کی ضرورت ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers