بین الاقوامی

فوجی اڈوں پر میزائل حملے میں 11 فوجی زخمی ہوئے: امریکہ کا اعتراف

امریکہ نے ایرانی میزائل حملے میں اپنے فوجیوں کے زخمی ہونے کا اعتراف کر لیا۔ عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر میزائل حملے میں 11 فوجی زخمی ہوئے۔ فوجیوں کو علاج کے لیے جرمنی اور کویت بھیج دیا گیا ہے، ترجمان امریکی فوج کا بیان۔ 8 جنوری کو ایرانی حملے کے بعد صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ آل اِز ویل کوئی فوجی زخمی یا ہلاک نہیں ہوا۔

امریکی فوج کے ترجمان نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ ایران کے عراق میں امریکی فوجی ائیر بیس پر انتقامی میزائل حملے میں 11 امریکی فوجی زخمی ہوئے ہیں جنہیں ائیر بیس سے علاج کے لیے  کویت اور جرمنی منتقل کیا گیا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ الاسد ائیر بیس پر ایرانی حملے میں کوئی امریکی فوجی ہلاک نہیں ہوا۔ زخمی فوجیوں کے صحت یاب ہونے کے بعد انہیں واپس عراق میں تعینات کیا جائے گا۔

ترجمان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ایرانی حملے کے بعد کئی امریکی فوجیوں کو سر پر چوٹ کے شبے میں امداد دی گئی جن میں سے کئی فوجیوں کو اب بھی طبی امداد دی جا رہی ہے۔

اس حوالے سے ان کا مزید کہنا تھا کہ ایک طے شدہ طریقہ کار ہے کہ دھماکے کے نتیجے میں قریب موجود تمام افراد کی دماغی چوٹ جانچنے کے لیے ان کی ٹرامیٹک اسکریننگ کی جاتی ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ ایران نے 8 جنوری کو عراق میں فوجی اڈوں پر بیلسٹک میزائل سے دو حملے کیے تھے۔ ایرانی پاسداران انقلاب کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ انھوں نے درجنوں میزائلوں سے امریکی اڈے کو نشانہ بنایا ہے۔ ایرانی میڈیا نے دعویٰ کیا تھا کہ میزائل حملوں میں 80 افراد مارے گئے ہیں۔

حملے کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنا ردِعمل دیتے ہوئے کہا کہ اب تک سب کچھ ٹھیک ہے۔ اپنے ٹویٹر پیغام میں انہوں نے کہا کہ ایران نے عراق میں دو فوجی اڈوں کونشانہ بنایا ہے۔ اب تک سب کچھ ٹھیک ہے۔ امریکی فوج سب سے بہتر ہے۔

Comment here

instagram default popup image round
Follow Me
502k 100k 3 month ago
Share