قومی

شوکت خانم کی تقریب میں وزیراعظم نے دلچسپ واقع بیان کیا

کراچی میں شوکت خانم ہسپتال کی فنڈ ریزنگ تقریب میں وزیراعظم عمران خان نے ہلکے پھلکے انداز میں زندگی کے کچھ ایسے واقعات بھی بتائے جنہیں سن کر تقریب میں قہقہے بکھر گئے۔

 

کراچی میں شوکت خانم اسپتال کی فنڈ ریزنگ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے بتایا کہ سال 2013 میں انتخابی مہم کے دوران سیڑھیوں سے گرکر شوکت خانم اسپتال پہنچا۔ شوکت خانم اسپتال کے ڈاکٹر عاصم نے ایسا ٹیکا لگایا کہ درد دور ہو گیا۔

وزیراعظم نے بتایا کہ ٹیکا لگنے کے بعد انہیں نرسیں حوریں نظر آنے لگیں۔ اس کے بعد میں نے میڈیا کے لیے پیغام بھی ریکارڈ کرایا جس میں مجھے یاد نہیں کہ میں کیا بول رہا تھا۔

انجکشن کا اثر ختم ہونے کے بعد پھر سے تکلیف شروع ہوگئی۔ میں نے ڈاکٹر سے بہت اصرار کیا کہ خدا کا واسطہ ہے وہ ٹیکا پھر سے لگا دو۔

میں نے ڈاکٹر کو دھمکیاں بھی دیں کہ میں تمہیں چھوڑوں گا نہیں لیکن ڈاکٹر نے ٹیکا نہیں لگایا۔

وزیراعظم نے کہا کہ کینسر ہسپتال بنانے کے لیے جب نکلا تو دلچسپ تجربات سامنے آئے۔ کھلاڑی کے لیے کھیل کے میدان میں سوچ الگ ہوتی ہے کیونکہ جیت پر تعریف اور ہار پر شرمندگی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

کینسر ہسپتال کے لیے ایک منفرد سوچ تھی۔ بہت سے ایسے امیروں کو جانتا ہوں جن کے پاس اربوں روپے ہیں لیکن دینے کی صلاحیت کسی کسی کے پاس ہوتی ہے۔

70 کڑور روپے کے بجائے ہم لوگوں سے ایک اینٹ کے عطیے کے لیے 20 روپے مانگتے تھے۔ مجھے اپنے گھر والوں سے بھی پیسے مانگتے ہوئے شرم آتی تھی۔ میں نے آج تک اپنے باپ سے بھی پیسے نہیں مانگے۔

میں اپنی کرکٹ کے آخری تین سال صرف ہسپتال کے لیے ہی کھیلا۔ جب بھی کوئی چیز جیتتا تھا تو اسے شوکت خانم کو عطیے کے توڑ پر دے دیتا تھا۔

Comment here

instagram default popup image round
Follow Me
502k 100k 3 month ago
Share