بین الاقوامی

آر ایس ایس نے اپنے دہشتگرد کو بچانے کے لیے انوکھی منطق پیش کر دی

دہلی پولیس جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طلبہ پر فائرنگ کرنے والے آر ایس ایس کارکن کو بچانے کے لئے سرگرم ہوگئی۔ دہشتگرد کو نابالغ قرار دے دیا۔ جبکہ دہلی پولیس ہیڈکوارٹر کے باہر دھرنا دینے والے طلبہ کو آج حراست میں لے لیا گیا ہے۔

دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ آر ایس ایس کارکن “رام بھکت گوپال” کی عمر 17 سال ہے۔ اسے آج جیونائل جسٹس بورڈ کے سامنے پیش کیا جائے گا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ رام بھکت کو اپنے کئے پر کوئی شرمندگی نہیں ہے۔

اس نے سوشل میڈیا پر شائع مواد دیکھ کر مسلمانوں پر حملہ کرنے کا منصوبہ بنایا۔ دوسری جانب آج دہلی پولیس کے خلاف احتجاج کرنے والے جامعہ کے طلباء کو پولیس ہیڈکوارٹر کے باہر سے دھرنا ختم کروا کر حراست میں لے لیا گیا۔

گزشتہ روز آر ایس ایس کے کارکن نے پولیس کی موجودگی میں مسلم طلباء پر فائرنگ کی تھی۔ اس نے فائرنگ سے قبل نعرہ لگایا تھا، یہ لو آزادی، دہلی پولیس زندہ باد۔

آرا یس ایس کا دہشتگرد فیس بک لائیو سٹریمنگ اور پوسٹ کے ذریعے حملے کا اعلان کرچکا تھا کہ مشن میں اگر میری موت واقع ہوجائے تومیری آخری رسم میں مجھے بھگوا میں لپیٹ کر لیجائیں اور جے شری رام کے نعرے لگائیں۔

رام گوپال کی فیس بک پر اسکی ہتھیاروں کے ساتھ کئی تصاویر بھی موجود ہیں۔

instagram default popup image round
Follow Me
502k 100k 3 month ago
Share