جناح ہسپتال میں گندگی اور تعفن ‘ وارڈز اور آئوٹ ڈور میں مریضوں کے بیٹھنے والی جگہیں کچرے کے ڈھیر

لاہور (مہران اجمل خان سے )بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح سے موسوم جناح ہسپتال لاہور کچرے کا ڈھیر بن گیا، مریضوں اور ان کے لواحقین میں انفیکشن پھیلنے لگا،جگہ جگہ وارڈ میں گندگی بیماریوں کا موجب بن گئی ،خبریں سروے نے جناح ہسپتال کی صفائی کا بھانڈا پھوڑ دیا ،چوہے ،وارڈز میں لال بیگ، کھٹمل اور کیڑے مکوڑوں کی بھرمار،واش روم میں گندگی اور تعفن کے باعث مریضوں کا رہنا بھی محال ہوگیا ،متعدد وارڈ سے ڈاکٹرز نے بھی شکایات کے انبار لگا دیئے ۔ بتایا گیا ہے کہ سرکاری ہسپتالوں میں صفائی کے ناقص انتظامات کے باعث ہسپتالوں میں مریضوں کے ساتھ لواحقین بھی میں بیماریوں میں مبتلا ہونے لگے۔جناح ہسپتال میں صفائی کی ناقص انتظامات سے داخل مریضوں میں پیٹ اور جلد کے انفیکشن پھیلنے لگے ہیں ۔ہسپتال کی وارڈز اور آئوٹ ڈور میں مریضوں کے بیٹھنے والی جگہیں کچرا دان سے بھری پڑی ہیں۔ جناح ہسپتال کی مختلف وارڈز کے ڈاکٹرز نے بھی میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کو ہسپتال میں ناقص صفائی بارے متعدد بار آگاہ کرنے کے باوجود انتظامیہ ٹس سے مس نہیں ہورہی ۔مریضوں کے لواحقین نے وزیر اعلی پنجاب ، صوبائی وزیر صحت اور سیکرٹری صحت پنجاب سے جناح ہسپتال میں گندگی کے باعث پھیلنے والی بیماریوں پر نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا ۔دوسری جانب ہسپتال انتظامیہ نے ڈی ایم ایس جینیٹوریل کو معطل کر دیا ۔ ایم ایس جناح ہسپتال ڈاکٹر تحسین کا کہنا ہے کہ ہسپتال میں صفائی کے لئے پرائیویٹ کمنپی کو نوٹسز جاری کر دئیے ہیں ۔
یہ فوری خبر ہے۔ مزید تفصیلات اور معاملے کے درست حقائق جاننے کے لئے اس صفحہ کو ریفریش کریں۔
متعلقہ خبریں